Statement of caretaker Chief Minister Khyber Pakhtunkhwa Muhammad Azam Khan regarding Kashmir Exploitation Day


Sports
*یوم استحصال کشمیر کے حوالے سے نگران وزیراعلی خیبر پختونخوا محمد اعظم خان کا بیان*
نگران وزیراعلی خیبر پختونخوا محمد اعظم خان نے مقبوضہ کشمیر کے عوام پر بھارت کے ظلم وستم خصوصاً گزشتہ چار سالوں سے غیر قانونی لاک ڈاﺅن کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کے عوام گزشتہ سات دہائیوں سے بھارت کی ریاستی دہشت گردی کا شکار ہیں۔ بھارت نے اس عرصہ کے دوران کشمیری عوام کو ان کے بنیادی حق "حق خودارادیت" سے محروم رکھنے کیلئے ظلم و ستم کی انتہاء کر رکھی ہے۔ فاشسٹ بھارتی حکومت کے تمام تر ظالمانہ ہتھکنڈوں کے باوجود جب کشمیری عوام اپنے حق کیلئے ڈٹ کر کھڑے ہیں تو بھارتی حکومت نے 5 اگست 2019 کو بھارت کے آئین میں شامل مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت (آرٹیکل۔370 ) کا خاتمہ کرکے مظلوم کشمیری عوام پر ظلم و ستم کی ایک نئی داستان کا آغاز کیا جو انسانی حقوق کے بین الاقوامی اداروں کیلئے لمحہ فکریہ ہے۔ یوم استحصال کشمیر کے حوالے سے اپنے خصوصی بیان میں نگران وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہم بھارت کی طرف سے مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ چار سالوں سے جاری بدترین ریاستی دہشت گردی کی مذمت کرتے ہیں اور کشمیری عوام کے حق خود ارادیت کی اخلاقی، سیاسی اور سفارتی سطح پر حمایت جاری رکھنے کے عزم کا اعادہ کرتے ہیں۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہمارے نہتے کشمیری عوام بھارتی ظلم و جبر کے سامنے سینہ سپر ہیں اور تشویش کی بات یہ ہے کہ انسانی حقوق کے علمبردار عالمی اداروں اور اقوام متحدہ کی قراردادوں کے باوجود کشمیری مسلمانوں پر ظلم ہو رہا ہے۔ وزیراعلیٰ نے اس موقع پر بین الاقوامی طاقتوں، اقوام متحدہ اور انسانی حقوق کی دیگر تنظیموں سے پر زور مطالبہ کیا ہے کہ وہ بھارت کی طرف سے کشمیری عوام پر ظلم وستم کا نوٹس لیں اور انہیں ان کی مرضی سے جینے کا حق دلانے میں اپنا کردار ادا کریں۔ محمد اعظم خان نے کہا کہ اقوام متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں کشمیری عوام کی خواہشات اور استصواب رائے سے مسئلہ کشمیر حل کیا جائے کیونکہ اس پورے خطے کا امن مسئلہ کشمیر کے حل سے وابستہ ہے ۔اُنہوں نے اس موقع پر بھارتی غاصبانہ قبضے کے خلاف برسر پیکار جرات مند کشمیری مسلمانوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے یقین دلایا کہ خیبر پختونخوا کی حکومت اور عوام ہمیشہ کی طرح کشمیری عوام کے ساتھ کھڑے ہیں اور ہر فورم پر اُن کی جدوجہد آزادی کی حمایت جاری رکھیں گے۔
Share On: